Month: July 2015

اِتنے اچھّے کیوں لگتے ہو؟

اِتنی مُدّت بعد ملے ہو کن سوچوں میں گم رہتے ہو؟ اِتنے خائف کیوں رہتے ہو؟ ہر آہٹ سے ڈر جاتے ہو تیز ہَوا نے مجھ سے پوچھا ریت پہ کیا لکھتے رہتے ہو؟ کاش کوئی ہم سے بھی پوچھے رات گئے تک کیوں جاگے ہو؟ میں دریا سے بھی ڈرتا ہوں !تم دریا سے … Continue reading اِتنے اچھّے کیوں لگتے ہو؟

Advertisements